image
Wednesday, Nov 13 2019 | Time 07:43 Hrs(IST)
Entertainment » Celebrity Brithday

غلام حیدر نے لتا کی صلاحیت کو پہچانا

غلام حیدر نے لتا کی صلاحیت کو پہچانا

(برسی 9 نومبر کے موقع پر)
ممبئی، 8 نومبر (یو این آئی) لتا منگیشکر کے فلمی کیرئر کے ابتدائی دور میں کئی ڈائریکٹر، پروڈیوسر اور موسیقاروں نے باریک آواز کی وجہ سے انہیں گانے کا موقع نہیں دیا لیکن اس وقت ایک موسیقار ایسے بھی تھے جنہیں لتا منگیشکر کی صلاحیت پر پورا عتماد تھا ۔
انہوں نے اس وقت پیش گوئی کی تھی یہ لڑکی آگے چل کر اتنا زیادہ نام کمائے گی کہ بڑے ہوکر ڈائریکٹر، پروڈیوسر اور موسیقار اسے اپنی فلموں میں گانےکا موقع دیں گے۔
یہ موسیقار تھے غلام حیدر۔

سال 1908 میں غلام حیدر کی پیدائش ہوئی۔
انہوں نے اپنی اسکولی تعلیم مکمل کرنے کے بعد ڈینٹسٹ کی تعلیم شروع کر دی تھی۔
اس دوران ان کا رجحان موسیقی کی جانب ہوا اور انہوں نے بابو گنیش لال سے موسیقی کی تعلم لینا شروع کردی۔
ڈینٹسٹ کی تعلیم مکمل کرنے کے بعد وہ بطور ڈینٹسٹ کےطور پرکام کرنے لگے۔
انہوں نےمحسوس کیا کہ موسیقی کے شعبے میں ان کا مستقبل زیادہ محفوظ ہوگا۔
اس کےبعد وہ کلکتہ کے الیکزینڈر تھیٹر کمپنی میں ہارمونیم نواز کے طور پر کام کرنے لگے۔

سال 1932 میں غلام حیدر کی ملاقات ہدایت کار پروڈیوسر اے- آر- کاردار سے ہوئی جو ان کی موسیقی سے کافی متاثر ہوئے۔
کار دار ان دنوں اپنی آنے والی فلم ‘سورگ کی سیڑھی’ کے لئے موسیقار کی تلاش میں تھے۔
انہوں نے حیدر سے اپنی فلم میں موسیقی دینے کی پیش کش کی لیکن اچھی موسیقی دینے کے باوجود فلم باکس آفس پر کامیاب نہیں ہوسکی۔
ا س دوران غلام حیدر کو ڈی ایم پنچولی کی پنجابی فلم ‘غلام بکاولی’ میں موسیقی دینے کا موقع ملا۔
فلم میں نورجہاں کی آواز میں غلام حیدر نے پنجرے دے وچ جوانی نغمہ کو اپنی موسیقی سے سجایا جو اس وقت سب کی زبان پر تھا۔
سال 1941 غلام حیدر کے سنی کیرئر کا اہم سال ثابت ہوا۔
فلم خزانچی میں ا ن کی موسیقی نے ہندستانی موسیقی کی دنیا میں ایک نئے دور کاآغاز کیا۔

جاری ۔
یو این آئی۔
شا پ۔
1059

غلام

غلام حیدر نے لتا کی صلاحیت کو پہچانا

(برسی 9 نومبر کے موقع پر)
ممبئی، 8 نومبر (یو این آئی) لتا منگیشکر کے فلمی کیرئر کے ابتدائی دور میں کئی ڈائریکٹر، پروڈیوسر اور موسیقاروں نے باریک آواز کی وجہ سے انہیں گانے کا موقع نہیں دیا لیکن اس وقت ایک موسیقار ایسے بھی تھے جنہیں لتا منگیشکر کی صلاحیت پر پورا عتماد تھا ۔

سنجیوکمار

سنجیوکمار ایک منفرد اداکار کے طور پر پہچانے جاتے تھے

(6نومبر برسی کے موقع پر)
ممبئی،5 نومبر (یو این آئی) گرودت کی بے وقت موت کے بعد ڈائریکٹر کے آصف نے اپنی فلم ’’لو اینڈ گاڈ‘‘ کی تخلیق کا کام بند کر دیا اور اپنی نئی فلم ’’سستا خون مہنگا پانی ‘‘كی پروڈکشن میں لگ گئے ۔

ہندی

ہندی فلم انڈسٹری کے عظیم فلمسازبی آر چوپڑہ

(5 نومبر برسی کے موقع پر)
ممبئی، 4 نومبر (یو این آئی) ہندستانی فلم انڈسٹری میں بی آر چوپڑا کو ایک ایسے فلمساز کے طور پر یاد کیا جائے گا جنہوں نے خاندانی، سماجی اور صاف ستھری فلمیں بناکر تقریباً پانچ دہائیوں تک فلم شائقین کے دلوں میں اپنی پہچان بنائے رکھی۔

کلاسیکی

کلاسیکی موسیقی کومنا ڈے نے فلمی دنیامیں ایک اعلی مقام پر پہنچایا

ممبئی، 23 اکتوبر (یواین آئی) ہندوستانی سنیما کی دنیا میں منا ڈے کو ایک ایسے گلوکار کے طور پر یاد کیا جاتا ہے جنہوں نے اپنی لاجواب پلے بیک گلوکاری کے ذریعے کلاسیکی موسیقی کو مخصوص شناخت دلائی۔

بالی

بالی وڈ کےباغی اداکار تھے شمي کپور

21 اکتوبر یوم پیدائش کے موقع پر خصوصی پیشکش
ممبئی، 20 اکتوبر (یو این آئی) بالی ووڈ میں شمي کپور ایسے اداکار ہیں جنہوں نے امنگ اور جذبات کو بڑے پردے پر انتہائی رومانوی انداز میں پیش کیا۔

’بدھائی

’بدھائی ہو‘ کو خاص فلم مانتے ہیں آیوشمان کھرانہ

ممبئی، 19 اکتوبر (یو این آئی) اداکار آیوشمان کھرانہ فلم ’بدھائی ہو‘ کو خاص فلم مانتے ہیں۔

تھریلر

تھریلر فلم میں کام کریں گے ارجن کپور

ممبئی، 19 اکتوبر (یو این آئی) ہندی فلموں کے مشہور اداکار ارجن کپور ’تھریلر‘ فلم میں کام کریں گے۔

روینہ

روینہ نے کرینہ کی تعریف کی

ممبئی، 19 اکتوبر (یو این آئی) بالی وڈ اداکارہ روینہ ٹنڈ ن نے کرینہ کپور کی تعریف کی ہے۔

بالی

بالی ووڈ کے شہنشاہ مکالمات تھے راجکمار

(8 اکتوبر یوم پیدائش کے موقع پر)
نئی دہلی، 7 اکتوبر (یو این آئی) ہندی سنیما کی دنیا میں یوں تو اپنی بااثر اداکاری سے کئی فلمی ستاروں نے شائقین کے دلوں پر راج کیا، لیکن ایک ایسا بھی ستارہ تھا جس نے نہ صرف سامعین کے دل پر راج کیا بلکہ فلم انڈسٹری نے بھی انہیں ’راجکمار‘کا درجہ دیا اور وہ تھے مکالمات کے شہشاہ کل بھوش پنڈت عرف راج کمار ۔

ویلن

ویلن سے ہیرو بنے ونود کھنہ

یوم ولادت 6 اکتوبر کے موقع پر خصوصی پیش کش
ممبئی، 5 اکتوبر (یو این آئی) بطور ویلن اپنے کیئرئر کا آغاز کرنے والے اور پھر فلم انڈسٹری میں بطور ہیرو شہرت کی بلندیوں تک پہنچنے والے صدابہار اداکار ونود کھنہ نے اپنی اداکاری سے مداحوں کے درمیاں اپنے انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔

کامیڈی کنگ  کہے جانے والے محمود کو بھی کرنی پڑی جدوجہد

کامیڈی کنگ کہے جانے والے محمود کو بھی کرنی پڑی جدوجہد

ممبئی، 28 ستمبر (یو این آئی) اپنے مخصوص انداز، اسٹائل اورمزاحیہ آواز سے تقریباً پانچ دہائیوں تک ہنسانے اور گدگدانے والےمحمود نے فلم انڈسٹری میں کنگ آف کامیڈی کا درجہ حاصل کیا لیکن انہیں اس کے لئے کافی مشقت کرنا پڑی اوریہاں تک سننا پڑا کہ نہ تو وہ اداکاری کرسکتے ہیں اور نہ ہی کبھی اداکار بن سکتے ہیں۔

بھارت رتن شہنائی نواز استاد بسم اللہ خان

بھارت رتن شہنائی نواز استاد بسم اللہ خان

نئی دہلی، 20 اگست (یو این آئی) دُنیا بھر میں شہنائی کو شناخت دلانےاور اسے خاص و عام میں مقبول بنانے والے معروف شہنائی نواز استاد بسم اللہ خان کی پیدائش21 مارچ 1916 کو بہار کے گاؤں (دمراؤں) ضلع بکسر کے پیغمبربخش اور والدہ مٹھاں کے گھر ہوئی تھی۔ بسم اللہ خان کے آباؤ اجداد بھوج پور ضلع بہار کے شاہی دربار میں نقار خانہ میں ملازم بھی تھے۔ان کے والد پیغمبر بخش خان مہاراجہ جودھ پور کے دربار میں شہنائی نواز تھے۔اس سے پہلے ان کےپردادا استاد سالار حسین خان اور دادا رسول بخش خان بھی دمراؤں کے شاہی دربار میں گاتےتھے۔ ماں باپ نے اُن کانام امیرالدین خان رکھا تھا لیکن دادا نے امیرخان کو بسم اللہ میں بدل دیا اور ہاتھ میں شہنائی تھما دی۔ چونکہ موسیقی انہیں میراث میں ملی تھی اسی لیے بچپن سے ہی موسیقی میں دلچسپی رکھنے والے بسم اللہ خان نے اپنے ماموں علی بحش سےشہنائی نوازی کی تعلیم حاصل کی اور پھر بعد میں بسم اللہ خان انہی کے ساتھ کاشی کے وشوناتھ مندر میں شہنائی بجانےلگے۔چار یا پانچ برس کی عمر میں بنارس آ گئے تھے۔

زی ٹی وی پر انگوری بھابھی اور گڈن کے ذریعہ کرکرے نے نئی سوچ کا جشن منایا

زی ٹی وی پر انگوری بھابھی اور گڈن کے ذریعہ کرکرے نے نئی سوچ کا جشن منایا

نئی دہلی، 15مئی(یو این آئی)رواں ماہ مئی میں کئی کردار جن میں گڈن تم سے نہ ہوپائے گا-کہ گڈن، بھابھی جی گھر پر ہیں کہ انگوری اور ہپو کی الٹن پلٹن کے راجیش اور کچھ دیگر کردار انتہائی دلچسپ کردار میں نظر آئیں گے جہاں وہ اپنے کنبوں کو دلچسپ انداز میں جدید سوچ کی طرف مائل کریں گے۔

image